LOADING

Type to search

مدینہ پہنچنے والے مسافروں کے لیے تین دنوں کا قرنطینہ لازمی قرار

Share

مدینہ منورہ پہونچنے والے مسافرین کے لیے وزارت حج و عمرہ کی جانب سے گائیڈ لائنس جاری کیا گیا ہے جس میں یہ کہا گیا ہے کہ ان تمام مسافرین کے لئے جو باہر سے مدینہ منورہ تشریف لائیں گے تین دنوں کا قرنطینہ لازمی ہوگا۔ یہ دراصل عمرہ زائرین اور سعودی عرب سے باہر لائسنس یافتہ ٹریول ایجنٹوں کو دھیان میں رکھتے میں ہوئے ہدایات کے طور پر جاری کیا گیا ہے۔

سعودی اخبار “عکاظ” کے مطابق ‘وزارت حج و عمرہ اور وزرات برائے زیارت امور کے نائب سیکریٹری محمد عبدالرحمن البیجاوی نے یہ واضح کیا کہ متعلقہ حکام نے فیلڈ سروسز کے اعلیٰ معیارات اور تمام آمد و رفت اور رہائش کے شعبوں میں ضروری احتیاطی تدابیر پر عمل در آمد کی خواہش ظاہر کی ہے۔

مملکت سعودی عرب جانے سے قبل آپ کو ان باتوں کا خیال رکھنا ہوگا

وزارت کی جانب سے جو ہدایات جاری کئے گئے ہیں ان کے مطابق سعودی عرب کے باہر سے آنے والے عازمین اور زائرین کی عمر 18 سے 50 سال کے درمیان ہونی چاہیے، نیز یہ بھی کہا گیا ہے کہ ان کے پاس پی سی آر میڈیکل ٹیسٹ سرٹیفکیٹ ہونا ضروری ہے جو یہ ثابت کریگا کہ وہ کورونا نیگیٹو ہیں۔ یہ سرٹیفیکیٹ ان کے ملک کے کسی قابل اعتماد لیبارٹری سے جاری کیا ہوا ہونا چاہیے۔ پی سی آر ٹیسٹ کے لئے نمونہ دینے اور مملکت کے لئے روانہ ہونے کی بیچ کی مدت 72 گھنٹے سے زیادہ کی نہیں ہونی چاہیے۔

مدینہ منورہ کے باشندوں کی دیکھ بھال کے لئے سعودی حکام کے مثبت اقدام

محمد عبدالرحمن البیجاوی نے کہا کہ متعلقہ حکام نے یہ فیصلہ لیا ہے کہ محمد بن عبد العزیز بین الاقوامی ہوائی اڈہ پر ضروری احتیاطی تدابیر پر عمل درآمد کیا جائے گا اور آنے والے زائرین کی صحت کا خاص خیال رکھا جائے گا، ساتھ ہی اس سے مدینہ منورہ کے باشندگان بھی کورونا جیسی مہلک وبا سے محفوظ رہ پائیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ تمام عازمین اور زائرین کے لئے تین دنوں کا قرنطینہ لازمی ہوگا اور اس درمیان انہیں رہائش اور صحت-جانچ وغیرہ کی تمام سہولیات فراہم کی جائیں گی۔ قرنطینہ کے بعد وہ مسجد نبوی جاکر عبادت کرسکیں گے۔

محمد عبدالرحمن البیجاوی نے واضح کیا کہ یہ تمام امور وزارت حج و عمرہ، صحت سے جڑے محکموں اور مسجد نبوی کے جنرل پریزیڈنسی کی نمائندگی کرنے والے حکام کے مابین ہم آہنگی سے انجام پا رہی ہیں۔ احتیاطی تدابیر پر سختی سے عمل کئے جانے کے پیچھے مقصد یہ ہے کہ تمام زائرین کی صحت کی حفاظت کی جا سکے اور وہ صحیح و سالم اپنے گھر لوٹ جائیں۔

محمد عبدالرحمن البیجاوی نے واضح کیا کہ یہ تمام امور وزارت حج و عمرہ، صحت سے جڑے محکموں اور مسجد نبوی کے جنرل پریزیڈنسی کی نمائندگی کرنے والے حکام کے مابین ہم آہنگی سے انجام پا رہی ہیں۔ احتیاطی تدابیر پر سختی سے عمل کئے جانے کے پیچھے مقصد یہ ہے کہ تمام زائرین کی صحت کی حفاظت کی جا سکے اور وہ صحیح و سالم اپنے گھر لوٹ جائیں۔

اعتمرنا ایپ سے متعلق مزید پڑھیے

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *