LOADING

Type to search

جبل عمر میریٹ ہوٹل، مکہ مکرمہ، کے جنرل منیجر جناب ولید سیلان کے ساتھ خاص گفتگو

Share

جبل عمر میریٹ ہوٹل مکہ مکرمہ شہر کے سب سے پر تعیش فائیو اسٹار ہوٹلوں میں سے ایک ہے۔ جدید ترین سہولیات اور خدمات سے مزین اس شاندار ہوٹل سے خانہ کعبہ کا نظارہ بآسانی کیا جاسکتا ہے۔

دو ٹاوروں پر مشتمل یہ عالیشان ہوٹل میریٹ انٹرنیشنل ہوٹلس اینڈ ریزورٹس کے زیر انتظام ہے۔ پہلے ٹاور میں 11 منزلیں ہیں جبکہ دوسرے ٹاور میں 20 منزلیں ہیں۔ اس ہوٹل میں مجموعی طور پر 426 کمرے اور سوئٹس موجود ہیں۔ ان کمروں کو نہ صرف یہ کہ دلکش انداز میں سجایا گیا ہے بلکہ جدید ترین سہولیات اور خدمات سے بھی مزین کیا گیا ہے۔

جبل عمر میریٹ ہوٹل

جبل عمر میریٹ ہوٹل مسجد الحرام سے تین منٹ کے فاصلے پر واقع ہے۔ اس کے احاطے میں دو عمدہ قسم کے ریستوراں اور ایک عالیشان کیفے موجود ہیں جہاں چوبیس گھنٹے عمدہ کھانے کی ڈشیں اور مشروبات فراہم کئے جاتے ہیں- اس میں ایک کمرہ نماز ادا کرنے کے لئے خاص کر دیا گیا ہے جہاں سے خانہ کعبہ نظر آتا ہے اور یہ روحانی منظر دل کو سکون و اطمینان سے بھر دیتا ہے۔

جبل عمر میریٹ ہوٹل

اس عالیشان ہوٹل میں قیام کرنا ایک خاص قسم کا روحانی لطف و سروربخشتا ہے اور تا عمر یاد رہ جانے والا خوشگوار تجربہ فراہم کرتا ہے۔

 

ہم نے انٹرویو لینے اور گفتگو کرنے کا ایک سلسہ شروع کیا ہے جس میں ہم ان لوگوں سے سوال کرتے ہیں جو عمرہ کی خدمات فراہم کرنے میں رہنما کا درجہ رکھتے ہیں۔ ہم ان سے ان کے کامیاب تجربے کے بارے تفصیل سے جانتے ہیں۔ جبل عمر میریٹ ہوٹل کے جنرل منیجر جناب ولید سیلان سے فون پر گفتگو اسی سلسلہ کی ایک اہم کڑی  ہے۔

ہم عمرہ کی خدمات فراہم کرنے والے اداروں کی ترقی، ان کو در پیش چیلینجیز اور ان پر قابو پانے کے طریقوں پر کام کرنے میں کافی دلچسپی رکھتے ہیں تاکہ اللہ کے مہمانوں کی بہتر خدمت کی جاسکے اور عمرہ کا شعبہ ترقی کی راہ طے کر سکے۔

آئیے سوالوں کا سلسلہ شروع کرتے ہیں۔ سب سے پہلے اس شراکت کی بات کرتے ہیں جو جبل عمر رئیل اسٹیٹ ڈویلپمنٹ گروپ اور میریٹ انٹرنیشنل ہوٹل گروپ کے مابین ہے۔ اس کا آغاز کیسے ہوا؟

پہلے تو میں آپ سب کا شکریہ ادا کرنا چاہتاہوں کہ آپ سب نے ہمارے لئے وقت نکالا۔ جبل عمر میریٹ مکہ مکرمہ کا پہلا ایسا ہوٹل ہے جس کا افتتاح جبل عمر پروجیکٹ، جو کہ واقعتا ایک بڑا منصوبہ ہے اور جس میں بڑے بڑے سرمایہ کاروں کے سرمایے لگے ہوئے ہیں، کے تحت ہوا تھا۔

جبل عمر مسجد الحرام کے بالکل قریب ہے اور اس جگہ موجود سبھی ہوٹلز پر تعیش فائیو اسٹار ہوٹلوں کے زمرے میں آتے ہیں۔ یہ تمام کوششیں صرف اللہ کے مہمانوں کو بہترین خدمات پیش کرنے کے لئے کی گئی ہیں۔

ہم نے جبل عمر رئیل اسٹیٹ ڈویلپمنٹ گروپ کے ساتھ اسٹریٹجک معاہدہ کیا ہے کہ ہم مزید بین الاقوامی ہوٹلوں کی تعمیر کے منصوبہ کو اس پروجیکٹ میں شامل کریں گے اور آپ تو جانتے ہیں کہ میریٹ دنیا بھر میں 30 سے زائد ہوٹلوں کے ساتھ ایک بین الاقوامی ٹریڈ مارک ہے۔

ہوٹل کے اندر کام کاج طریقہ کار کیا ہے؟ دونوں شریکوں کے مابین کام کاج کس طرح تقسیم کیا جاتا ہے؟

واضح طور پر کہوں تو جبل عمرریئل اسٹیٹ ڈویلپمنٹ گروپ مالک یا شیئر ہولڈنگ کمپنی ہے تاہم میریٹ ایک مینیجنگ پارٹی ہے جو ہوٹل کے کام کاج اور نظام کو چلانے کے پابند ہے اور ہوٹل میں موجود تمام چیزیں میریٹ انٹرنیشنل کے زیرنگرانی انجام پاتی ہیں۔

کیا آپ ہوٹل اور رہائش کے کاروبار میں بین الاقوامی شراکت تجویز کرتے ہیں؟

ہوٹل اور رہائش کے کاروبار میں بین الاقوامی شراکت کے سلسلے میں میریٹ کو مثال کے طور پر پیش کرنا چاہتا ہوں۔ پچھلے کئی سالوں میں حکومت کی جانب سے کی جانے والی کوششیں قابل ستائش ہے اورمکہ مکرمہ میں موجود تمام ہوٹلز خاص طور پر میریٹ ہوٹل بین الاقوامی معیار پر کھڑے اترتے ہیں اور نظام کی پابندی کرتے ہیں۔ لہذا، میں اعتماد کے ساتھ کہ سکتا ہوں کہ مہمانوں کو بہترین خدمات پیش کرنے کے لئے بین الاقوامی شراکت لازمی ہے۔

مکہ مکرمہ کے سب سے بڑے ہوٹلوں میں سے ایک ہونے کی حیثیت سے، کیا آپ ہمیں بتاسکتے ہیں کہ فی الحال ہوٹل کے مہمانوں کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے؟

ہمارے ہوٹل کا افتتاح سال 2015 کے رمضان المبارک کے مہینے میں ہوا اور جلد ہی ہمارا یہ عالیشان ہوٹل نہ صرف یہ کہ سعودی عرب بلکہ پوری دنیا میں میں مشہور ہوگیا۔ ہمارے ہوٹل کی خصوصیت یہ ہیکہ وہ گروپ میں سفر کرنے والوں کے لئے زیادہ مناسب ہے۔

افتتاح کے وقت ہمارے پاس اچھا خاصہ مارکیٹنگ بجٹ تھا اور کورونا کے سال سے پہلے تک ہم مہمانوں کو اپنے ہوٹل تک لانے اور ان کو بہتر خدمات پیش کرنے میں بڑی کامیابیاں حاصل کر رہے تھے۔ ہماری غیر معمولی خدمات کی وجہ سے ہمیشہ ہمیں برتری حاصل رہی ہے۔

آپ کس طرح سے مہمانوں کو اطمینان بخش خدمات فراہم کرتے ہیں اور مہمانان کرام کے مطمئن ہونے کا اندازہ لگانے کے لئے آپ کے پاس کیا معیار ہے؟ نیز آپ شکایتوں کا مداوا کیسے کرتے ہیں؟

مہمانوں کو تسلی بخش خدمات فراہم کرنے اور اسکا اندازہ لگانے کے لئے ہم میریٹ انٹرنیشنل کے معیار اور سسٹم کی پیروی کرتے ہیں جسے “The Guest Voice” ‘مہمانوں کی آواز’ کا نام دیا گیا ہے اور جس کے ذریعہ ہم یہ جاننے کے خواہشمند ہوتے ہیں کہ ہمارے مہمان ہماری خدمات کو دوسروں کے سامنے کس طرح پیش کرتے ہیں۔

ای میل کے ذریعہ ہم مہمانوں کو ایک سروے بھیجتے ہیں۔ جیسے ہی ہمیں کوئی منفی رائے ملتی ہے فورا ہم اس پر کاروائی کرتے ہیں اور اس بات کا خاص خیال رکھتے ہیں کہ دوبارہ اس طرح کی کوئی منفی رائے نہ ملے۔

کیا ہم جان سکتے ہیں کہ آج کل ہوٹل کے کمروں کی بکنگ کی کیا شرح ہے؟

کووڈ-19 سے پہلے کمروں کے بکنگ کی شرح اوسطا 75 سے 80 فیصد سالانہ تھی۔ ہوٹل میں 426 کمرے ہیں جن میں سے 54 سوئٹس ہیں جہاں سے بیت اللہ اور مسجد الحرام صاف نظر آتے ہیں اوردو عالیشان ریستوراں ہیں جہاں بیک وقت 1500 مہمانوں کو کھانا پیش کیا جاسکتا ہے۔ ہوٹل میں ایک کمرہ نماز ادا کرنے کے لئے خاص کردیا گیا ہے جس میں 450 افراد بآسانی نماز ادا کرسکتے ہیں۔ الگ الگ سائز کے میٹنگ روم بھی ہوٹل میں موجود ہیں۔ خاص مہمانوں کے لئے 11 لفٹ اور 137 پارکنگ لاٹ کا انتظام کیا گیا ہے۔ آج کل کووڈ-19 کی وجہ سے بکنگ شرح گر کر 20 فیصد تک پہونچ گیا ہے

رمضان المبارک کے مہینے کے لئے کیا کوئی خاص تیاری کی جاتی ہے؟ کیا رواں سال کے مقدس مہینہ کے دوران ہوٹل کے بکنگ کی شرح میں اضافے کے بارے میں کوئی مثبت اشارے مل رہے ہیں؟

ہم رمضان المبارک سے ایک ماہ قبل ہی مہمانوں کی ضیافت کی تیاریوں میں لگ جاتے ہیں۔ تمام کمروں کی سجاوٹ، استقبال کے لئے رکھے گئے ڈیسک، مہمانوں کو ہوٹل کی جانب سے افطار کے وقت پیش کئے جانے والے مشروبات، رمضان المبارک کے مطابق ہوٹل کی سجاوٹ اور دیگر موضوعات پر تبادلہ خیال کرنے کے لئے ہم ہفتہ واری اجلاس کرتے ہیں جس میں ہوٹل کے ذمہ داران سے لیکر ہرشعبے میں کام کرنے والے افراد شامل ہوتے ہیں اور اپنے قیمتی آراء سے نوازتے ہیں۔

گرچہ ہمیں یہ معلوم نہیں ہے کہ کورونا سے بگڑے حالات کب معمول پر آئیں گے لیکن ہم یہ کہ سکتے ہیں کہ کورونا سے قبل مہمانوں کی جو تعداد ہمارے پاس آتی تھی اس کی آدھی تعداد بھی اگر ہمارے پاس آگئی تو ہم نے اچھا کام کیا ہے۔

مملکت سعودی عرب  میں عمرہ اور ہوٹل کے شعبے میں کام کرنے کے تجربہ سے کیا آپ یہ تجویز کرتے ہیں کہ ہوٹل اور مملکت سے باہر عمرہ فراہم کرنے والے ایجنٹوں کے مابین براہ راست تعلق کی کوئی اہمیت ہے؟

جی بالکل، یہی وجہ کہ ہم باہر کے عمرہ ایجنٹوں کے ساتھ معاملہ کرنے کے عادی ہوچکے ہیں اور وہ ایجنٹس اپنے مہمانوں کو اطمینان بخش خدمات فراہم کرنے کا خاص خیال بھی رکھتے ہیں۔ یہاں تک کہ اگر کوئی بکنگ سعودی ایجنٹ کے ذریعے بھی ہوتی ہے تب بھی زبان، مہمانوں کی خاص ضروریات اور دیگر چیزوں کے افہام و تفہیم کے لئے بیرونی ایجنسی کی خدمات لینا ضروری ہوجاتا ہے۔

آئیے نمبر کی بات کرتے ہیں۔ کس جگہ کے مہمانوں کو جبل عمر ہوٹل زیادہ پسند ہے؟ نمبر کے لحاظ سے کہاں کے لوگ آپ کے سرفہرست مہمان ہیں؟

ہمارے پاس یوروپ، امریکہ، شمالی افریقہ، اردن اور دنیا بھر کے دیگر ممالک سے مہمان آتے ہیں اور سبھی ہمیں پسند بھی کرتے ہیں کیونکہ ہمارا ہوٹل مسجد الحرام سے قریب ہونے کے ساتھ ساتھ کشادہ کمروں پر مشتمل ہے جہاں سے خانہ کعبہ نظر آتا ہے۔ ہم مہمانوں کو عمدہ قسم کے پکوان اور مشروبات پیش کرتے ہیں۔ ہماری شہرت میں ہماری خدمات کا اہم کردار ہے۔

عمرہ بلاگ میں ہم نے ایک سیکشن ‘سعودی عرب میں سیاحت’ کے لئے خاص کیا ہوا ہے اور ہم سعودی حکومت کی جانب سے سعودی عرب میں سیاحت کو بڑھانے کے لئے کی جانے والی کوششوں سے بھی واقف ہیں۔ کیا آپ حکومت کے اس منصوبہ میں اس کا ساتھ دینا چاہتے ہیں اور گھریلو سیاحت کو فروغ دینے کے لئے کچھ کرنا چاہتے ہیں؟

پہلے دن سے ہی ہم سرمایہ کارہونے اور ہوٹل انڈسٹری میں کاروبار کرنے کی حیثیت سے حکومت کے 2030 کے وژن کی حمایت میں کام کرتے آئیں ہیں۔ اس وژن کے تحت جو بھی ہدایات اور ضوابط ہیں ان کو نافذ کرنے کے ہم خواہشمند ہیں۔

مزید یہ کہ ہم نے 2030 وژن سے بہت پہلے ہی سعودی عرب کو مارکیٹ کے طور پر دیکھنا شروع کردیا تھا۔ ہم نے یہ سیکھ لیا ہے کہ سعودی مہمانوں کی کیا ترجیحات ہوتی ہیں اور ان کو کیسے خوش کن خدمات فراہم کیا جاسکتا ہے۔ ہم اپنے سعودی مہمانوں کے لئے موقع بہ موقع آفرز بھی پیش کرتے رہتے ہیں۔

حالیہ کچھ برسوں میں زیادہ تر کمپنیاں روایتی مارکیٹنگ کے متبادل کے طور پرe-marketing ‘آن لائن مارکیٹنگ’ پر توجہ صرف کر رہی ہے۔ 2021 میں آپ کا آن لائن مارکیٹنگ کو لیکر کیا پلان ہے؟

ہمارے پاس مارکیٹنگ کرنے کے لئے خود کا ڈیپارٹمنٹ ہے جو ہمارے صارفین کو ہوٹل تک لانے کے لئے چوبیس گھنٹہ کام کر رہا ہے۔ ہم صارفین کو لبھانے کے لئے قیمت میں کچھ فیصد چھوٹ دیتے رہتے ہیں۔ خاص دنوں میں ہم زیادہ چھوٹ دیتے ہیں تاکہ ہم مزید مہمانوں کو ہوٹل کی خدمات پیش کرسکیں۔ آن لائن خدمات فراہم کرنے کے لئے جو بھی کاغذی کاروائی مطلوب ہے سب ہم مکمل کرچکے ہیں۔ ہم ہوٹل کے افتتاح سے ہی آئن لائن مارکیٹنگ کرتے آرہے ہیں۔

وزارت حج و عمرہ نے حالیہ برسوں میں جو تکنیکی تبدیلی کی ہے اس سلسلے میں آپ کی کیا رائے ہے؟

میں ہوٹل کمیٹی کا ممبر ہوں اور مختلف وزارتوں جیسے وزارت سیاحت اور وزارت حج و عمرہ وغیرہ سے ملاقاتوں کا سلسلہ بھی جاری رہتا ہے۔ میری یہ رائے ہے کہ تکنیکی تبدیلی قابل ستائش ہے تاہم میں یہ کہنا چاہوں گا کہ تکنیک سے تمام چیزوں کو اور بہتر طریقہ سے انجام دینے کے لئے کنٹرول میں اضافہ کی ضرورت ہے تاکہ آن لائن پلیٹ فارم کے ذریعہ قیمتوں کو کنٹرول کیا جاسکے۔ اس طرح غیر قانونی ایجنٹوں کی ہیرا پھیری اور ان کے ذریعہ کئے گئے جھوٹے وعدوں کو مکمل طور پر ختم کیا جا سکتا ہے۔

آن لائن ٹریول پلیٹ فارمس عمرہ کی خدمات فراہم کرنے کے مارکیٹ میں داخل ہورہے ہیں اسی میں سے ایک ‘عمرہ می‘ بھی ہے، تو کیا آپ ہمارے قارئین کو اپنے تجربہ کی روشنی میں عمرہ می کے خدمات کے تعلق سے کوئی رائے دینا پسند کریں گے؟

سچ پوچھیے تو میں آپ کے مداحوں میں سے ہوں۔ آپ لوگ عمرہ انڈسٹری میں کافی اچھا کام کرہے ہیں۔ آپ لوگ داخلی اور خارجی دونوں مارکیٹس میں صارفین کی پہلی پسند بن گئے ہیں۔ عمرہ می اعتماد کا دوسرا نام بن گیا ہے کیونکہ آپ کی پوری ٹیم اپنے کام کو توجہ سے انجام دیتی ہے اوراس وقت تک ہماری معاونت میں لگے رہتے ہیں جب تک مہمانوں کے مسائل کا اطمینان بخش حل تلاش نہ کر لیا جائے۔ یہ صرف میری ذاتی رائے نہیں ہے بلکہ یہ فیڈ بیک مجھے ہر اس شخص سے ملتا ہے جو عمرہ می استعمال کرتا ہے

عمرہ می کے تعلق سے مجھے کوئی شکایت موصول نہیں ہوئی ہے بلکہ یہ صارفین-دوست ہے۔ کم وقت میں اس طرح کا اعتماد بحال کرلینا کوئی آسان کام نہیں ہے۔ در حقیقت میں لوگوں کو عمرہ می کے ذریعہ بکنگ کرنے کا مشورہ دوں گا کیونکہ جب اللہ کے مہمانان کرام ہمارے یہاں آئیں گے اور ہمیں جب بھی کوئی ضرورت درپیش ہوگی تو عمرہ می کی ٹیم ہماری معاونت کو تیار رہے گی۔

آپ کے ہوٹل کا شمار مکہ مکرمہ کے بڑے ہوٹلوں میں ہوتا ہے۔ اس حیثیت سے آنے والے دنوں میں آپ عمرہ انڈسٹری کے مستقبل کو کیسے دیکھتے ہیں؟

میں پرامید ہوں۔ حکومت کے ذریعہ دیے گئے بیان سے ایسا لگتا ہے کہ اس بار حج کا انعقاد کیا جائے گا اور اگر ایسا ہوا تو یقینا ہمارے کاروبار کو فائدہ ملے گا۔ عازمین حج و عمرہ بیت اللہ شریف کی زیارت کو ترس رہے ہیں۔ کورونا جیسی وبائی بیماری کے خاتمے اور چیزوں کے معمول پر آنے کی ہر کوئی امید کرریا ہے۔ نیز وزارت حج و عمرہ کی جانب سے قابل ستائش کوششیں کی جارہی ہیں اسی لئے میں پرامید ہوں۔

آخر میں آپ سے ہم یہ سوال کرنا چاہیں گے کہ آپ عازمین حج و عمرہ کو خدمات فراہم کرنے کے لئے کام کرنے والے لوگوں کو کیا مشورہ دینا چاہتے ہیں؟

حج و عمرہ کی خدمات فراہم کرنے والوں کو رول ماڈل بننے کی ضرورت ہے کیوںکہ اللہ تعالی نے ان کا انتخاب اعلی مقصد کے لئے کرلیا ہے اور اپنے مہمانوں کی خدمت کا موقع عنایت کیا ہے۔

گفتگو کے آخر میں ہم نے جبل عمر میریٹ ہوٹل کے جنرل منیجر جناب ولید سیلان کا قیمتی معلومات فراہم کرنے اور تجربات ساجھا کرنے پر تہ دل سے شکریہ ادا کیا۔

خلیج میں بہترین عمرہ خدمات فراہم کرنے والے کے ساتھ خاص گفتگو

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *